91

نواز شریف کے ستارے گردش میں سابق آرمی چیف مرزا اسلم بیگ نے اضغر خان کیس میں بم گرا دیا-

سابق آرمی چیف اسلم بیگ نے FIA کو اپنے بیان میں نواز شريف کے بارے میں زبردست انکشاف کیا ہے –

اسلام آباد – پاکستان کے سابق آرمی چیف جنرل مرزا اسلم بیگ نے وفاقی تحقیقاتی ایجنسی کو دیے گیے بیان میں اعتراف کیا ہے- کہ مغزول وزیر اعظم نواز شریف نے 1990 کے عام انتخابات کو سبوتاژ کرنے کے لیے فوج سے پیسے لیے تھے –

جنرل (ر) مرزا اسلم بیگ نے 1988 اور 1991 کے درمیان آرمی سٹاف چیف رہ چکے ہیں، نے دعویٰ کیا ہے کہ پیسے کئی سیاستدانوں میں تقسیم کئے گۓ تھے- جس میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سابق صدر نواز شریف بھی شامل ہے
انہوں نے FIA کے سامنے یہ اعتراف نواز شریف کے فوج سے پیسے نا لینے انکار کے بعد کیا ہے –

دوسری طرف جنرل (ر) بیگ نے کہا کہ وہ نواز شریف کی موجودگی میں ثبوت فراہم کرے گا-اس کے علاوہ، سابق آرمی چیف نے کہا کہ، وہ اصغر خان کیس میں اپنے بیان کو تفصیل سے ریکارڈ کرینگے جب نواز شریف ایف آئی اے کے سامنے پیش ہونگے –

t>

ہفتہ کے روز شریف نے اصغرخان کیس میں اپنے وکیل کے ذریعے سپریم کورٹ میں اپنا جواب پیش کیا-

بڑی شریف، ان کے جواب میں 1990 کے عام انتخابات کی مہم پر خرچ کرنے لیفٹیننٹ جنرل (ر) اسد درانی سے یا ایک عطیہ کے طور پر ان کے نمائندوں سے Rs3.5 لاکھ وصول کرنے کے دعووں کی تردید کی.

نواز شریف یونس حبیب سے یا ان کی ہدایات کے تحت Rs3.5 ملین اور Rs2.5 ملین رقم کی وصول کی تردید کی-

سابق وزیراعظم نے یہ بھی کہا کہ اس مسئلے کے بارے میں وفاقی تحقیقات ایجنسی (ایف آئی اے) کے انکوائری کمیٹی کے سامنے پہلے ہی اس مسلے کے بارے میں 14 اکتوبر، 2015 کو اپنا بیان ریکارڈ کیا تھا-

ایئر مارشل اصغر خان نے کیس دائر کیا تھا – جس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ 1996 میں ، دو سینئر فوجی افسران اور وقت کے صدر غلام اسحاق خان نے پاکستان پیپلز پارٹی کی 1990 کے انتخابات میں محفوظ فتح کو ناکام بنانے کے لئے چند افراد کے درمیان 140 ملین روپے آلاٹ کرنے کا دعوی کیاتھا-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں