Islamic History 24

حضرت ‍‍‌‍‌‍‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌‍‌معاویہ رضی اللّہ عنہ کا ایک واقعہ

حضرت تھانو رحمتہ الله علیہ نے حضرت معاویہ راضی اللہ عنہ کا ایک قصہ لکھا ہے کہ آپ روزانہ تہجد کی نماز کے لے بیدار ہوا کرتے تھے …… ایک دن اپ کی آنکھہ لگ گئی ….اور تہجد قضا ھو گئی سارا دن روتے روتے گزار دیا اور توبہ استغفار کی کہ یا الله آج میری تہجد کا ناغہ ھو گیا ….. اگلی رات جب سوۓ تو تہجد کے وقت ایک شخص آیا اور اپ کو تہجد کے لے بیدار کیا ….اپ نے بیدار ھو کر دیکھا کہ یہ بیدار کرنے والا شخص کوئی اجنبی معلوم ہوتا ہے اپ نے پوچھا کہ تم کون ھو؟ اس نے کہا کہ میں ابلیس ہوں …. اپ نے فرمایا کہ اگر تو ابلیس ہے تو تہجد کی نماز کے لیے اٹھانے سے تجھے کیا عرض؟وہ شیطان کہنے لگا بس اپ اٹھ جائے اور نماز پڑھ لیجۓ حضرت معاویہ رضی الله عنہ نے فرمایا کہ تم تو تہجد سے روکنے والے ھو …. اٹھانے والے کسے بن گۓ؟ شیطان نے جواب دیا کہ بات دراصل یہ ہے کہ گزشتہ رات میں نے اپ کو تہجد کے وقت سلا دیا اور آپ کی تہجد کا ناغہ کرا دیا …. لیکن سارا دن آپ تہجد چوٹنے پر روتے رہے ……
جس کے نتیجے میں آپ کہ درجہ اتنا بلند ہوا کہ تہجد پڑھنے سے بھی اتنا بلند نہ ہوتا … اس سے اچھا تویہ تھا کہ تہجد ہی پڑھ لیتے ….. اس لیے آج میں خود آپ کو اٹھانے آیا ہوں تاکہ آپ کا درجہ مزید بلند نہ ہوجاۓ-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں