91

بڑوں کی حکمت اور دانائی کہ ایک عبرت انگیز واقع

کہتے ہیں کہ ایک سلطنت تھی وہاں کے بادشاہ کہ حکم تھا ملک میں کوئی بھی بوڑھا آدمی زندہ نہیں رہ سکتا چناچے جب کوئی آدمی بوڑھا ھو جاتا تو اسے پہاڑ سے گرایا جاتا تھا چوناچے اس ملک میں کوئی بوڑھا آدمی نہ رہا اس طرح ایک زمیندار آدمی بوڑھا ہوگیا جب اس کو پتا چلا کہ اس کا وقت قریب آرہا ہے تو اس نے اپنے بیٹوں کو بلایا اور ان سے التجا کی کہ اس کو پہاڑ سے نہ گرایا جاۓ بیٹوں کو بھی باپ پر ترس آیا اور باپ سے وعدہ لیا کہ وہ ایک محسوس کمرے میں رہانگے اور ادھر سے کھبی بھی نہ نکلے گے ایک دن بادشاہ بہت بیمار ھوا بہت سرے حکیموں اور طبیبوں سے علاج کرایا لیکن کوئی فائدہ نہ ھوا ایک حکیم نے اس سے کہا کہ ان کا علاج صرف ایک چیز سے ممکن ہے اور وہ ہے( ہر پودے کا پانی ) بادشاہ نے پورے ملک میں آدمی دوڑا دیں لیکن کسی سے کوئی پتہ نہ چلا کہ ہر پودے کا پانی کیا ہوتا ہے بادشاہ کی حالات دن بہ دن خراب ہوتی جا رہی تھی سب لوگ کہہ رہے تھے کہ بڑوں سے پوچھ لیا جائے کہ ہر پودے کا پانی کیا ہوتا ہے لیکن پورے ملک کوئی بڑے عمر کا آدمی نہیں رہ گیا تھا ایک دن زمیندار کے بیٹے باپ کے پاس آگۓ ا ور باپ کو واقغے سے اگاہ کیا اس نے کہا جاؤ اور بادشاہ سے کہدو کہ دریا کہ پانی پیے کیونکہ یہ پانی ہر پودے سے ھو کہ گزرتا ہے پانی استعمال کرنے سے بادشاہ چند دن میں ٹھیک ہوا چند دن بعد بادشاہ نے زمیندار کے بیٹوں کو بلایا اور ان سے پوچھا کہ کس طرح ان کو پتا چلا اب وہ لوگ مزید نہیں چھپا نہیں سکتے تو انہوں نے صاف صاف بتایا کہ کس طرح انہونے اپنے بوڑھے باپ کو چھپایا تھا جس کے بعد بادشاہ کو اپنی غلطی کا احساس ھو گیا اور اسنے اعلان کیا کہ آج کے بعد کسی بھی بوڑھے آدمی کو نا مرا جائے گا اس لیے کہتے ہیں کہ بڑوں کی باتوں میں حکمت اور دانائی ہوتی ہیں

کیٹاگری میں : ہوم

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں